آیت اللہ زکزکی کے ہندوستان سے جانے کا بیحد افسوس ہے : مولانا کلب جواد نقوی





آیت اللہ زکزکی کے ہندوستان سے جانے کا بیحد افسوس ہے : مولانا کلب جواد نقوی

نائیجیریا سے علاج کے لئے ہندوستان آئے قائد تحریک اسلامی آیت اللہ شیخ زکزکی کے واپس چلے جانے پر امام جمعہ مولانا سید کلب جواد نقوی نے اظہار افسوس کرتے ہوئے نائیجیریہ حکومت اور ان افراد کی سخت مذمت کی جو ان کے نام پر گندی سیاست کررہے تھے

مولانا نے ان افراد کی بھی سخت مذمت کی جنہوں نے آیت اللہ زکزکی کو ہندوستان چھوڑنے پر مجبور کیا ۔مولانانے کہاکہ کچھ پاکستانی ایجنٹ نہیں چاہتے تھے کہ ان کا علاج ہندوستان میں ہو ۔وہ مسلسل شیخ زکزکی کو گمراہ کررہے تھے کہ ہندوستانی ڈاکٹر ان کا قتل کردیں گے ۔ہم نے اپنے ذرائع سے اور مختار عباس نقوی نے ان سے ملاقات کرکے بہتر علاج کی یقین دہانی کرائی تھی مگر ہندوستان کے دشمن افراد اپنی سازشوں میں کامیاب ہوگئے اور شیخ زکزکی کو ہندوستان چھوڑ کر جانا پڑا ،جو انتہائی افسوس ناک ہے ۔مولانانے کہاکہ کچھ لوگ ان کے نام پر فنڈ اکٹھا کرنے کی کوشش کررہے تھے جو قابل مذمت ہے اگر کسی نے بھی شیخ زکزکی کے نام پر کسی کو بھی ایک روپیہ ڈونیشن دیاہے تو وہ اس چندہ جمع کرنے والے کا نام ظاہر کرے ۔ہم ایسے لوگوں کی سخت مذمت کرتےہیں جنہوں نے شیخ زکزکی کے نام پر فنڈ اکٹھا کرنے کی کوشش کی ۔مولانا نے آخر میں دعا کرتے ہوئے کہاکہ ہم مؤمنین سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ آیت اللہ زکزکی کی صحت و سلامتی اور جلد شفایابی کے لئے دعا کریں ۔
واضح رہے کہ مولانا کلب جواد نقوی نے مسلسل شیخ زکزکی سے ملاقات کی کوشش کی مگر نائیجریہ سے آئی ہوئی ان کی سیکورٹی نے انہیں شیخ سے ملنے کی اجازت نہیں دی ۔مولانا ان کے استقبال کے لئے ائیرپورٹ بھی گئے تھے مگر شیخ کو ان کی سیکورٹی دوسرے دروازے سے ایمولینس میں اسپتال لے گئی ۔دوسرے دن بھی شیخ سے ملنے کی کوشش کی گئی مگر ان سے ملنے کی اجازت نہیں ملی ۔‎
شیخ زکزکی کو صرف علاج کے لئے ہندوستان آنے کی عدالت سے اجازت ملی تھی ،وہ علاج کے دوران بھی نائیجیریہ حکومت کے قیدی تھے ۔حکومت کی طرف سے انکی سیکیورٹی کے لوگ ہندوستان بھی آئے تھے جو ان پر سختی برت 

Post a Comment

Previous Post Next Post